ایران میں حکومت کے مخالف صحافیوں کو سخت سزاؤں کا سلسلہ جاری ہے

ایران کی انقلابی عدالت نے وائس آف امریکہ فارسی سروس کی خاتون اینکر مسیح علی نژاد کے بھائی کو آٹھ سال قید کی سزا سنائی گئی ہے

مغربی اور امریکی میڈیا کے مطابق ایرانی سرکاری عدالت نے وائس آف امریکہ کی فارسی سروس کی خاتون اینکر مسیح علی نژاد کے بھائی کو آٹھ سال قید کی سزا سنائی گئی ہے۔ اس حوالے سے امریکی حکومت اور وائس آف امریکہ کی انتظامیہ کی طرف سے سخت ترین الفاظ میں مذمت کی گئی ہے۔
 
گذشتہ کئی سالوں سے دیکھا  جا رہا ہے کہ ایرانی ہالیسیوں کیخلاف لکھنے کے جرم میں ایران سے جلاوطن ہونے والے صحافیوں کے قریبی عزیزوں اور رشتہ داروں کو ایرانی حکومت کی طرف سے  ہراساں کیا جا رہا ہے ۔ وائس آف امریکہ کی  خاتون اینکر مسیح علی نژاد کے بھائی علی رضا علی نژاد کے وکیل کے مطابق انہیں آٹھ سال کی سزائے قید سنائی گئی ہے۔
 
علی رضا نژاد کے وکیل سعید دیغان کے مطابق تہران کی انقلابی عدالت نے رضا علی کو قومی سلامتی کیخلاف بولنے ، ایرانی سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامینائی کی توہین کرنے اور حکومتی پالیسیوں کیخلاف پروپیگنڈا کرنے کے جرائم کے ضمرے میں آٹھ سال قید کی سزا سنائی ہے۔ رضا علی کو گزشتہ سال ستمبر میں گرفتار کیا گیا تھا۔
 
وائس آف امریکہ کی اینکر مسیح علی نژاد نے بڑے بھائی کو ایرانی حکومت کی طرف سے سزا سنانے پر شدید رنج اور غصہ کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا ہے کہ ایرانی حکومت دراصل ان کے بھائی کو سزا دیکر انہیں خقف زدہ اور خاموش کرنا چاہتی ہیں۔
مسیح علی نژاد میڈیا پروگراموں میں ایران میں معاشرتی اور ثقافتی مسائل سمیت ایران کے انتہا پسند حکمرانوں کی حقوقِ نسواں پر عائد پابندیوں اور آزادی اظہار کیخلاف آواز اٹھاتی ۔
 
یو ایس ایجنسی فور گلوبل میڈیاب کے چیف اگزیکٹو افسر مائیکل پیک نے کہا ہے کہ ایرانی حکومت مطلق العنان بن چکی ہے۔ اور اس نے گذشتہ تیس برسوں سے خبروں کی آزادانہ اشاعت پر ہر طرح سے پابندیاں لگا رکھی ہیں۔ اور صحافیوں کو خاموش رکھنے کیلئے ان کیخلاف ظالمانہ ہتھکنڈے استعمال کر رہی ہے۔
 
مائیکل پیک نے کہا کہ ان کا ادارہ علی رضا اور ان کے خاندان کے ساتھ یک جہتی کا اظہار کرتا ہے۔ وائس آف امریکہ کی فارسی سروس سے ایران کیلئے امریکہ کے خصوصی ایلچی، برائین ہُک کا کہنا تھا کہ عالی رضا نژاد کا واحد جرم ایک ایسی بہن کا بھائی ہونا ہے جن میں ایرن کی کرپٹ اور بدعنوان حکومت کے خلاف بات کرنے کی جرات مندانہ روش ہے ۔
 
وائس آف امریکہ کے پبلک ریلیشنز آفس نے ایک بیان میں علی رضا کو آٹھ سال قید کی سزا کی شدید مذمت کرتے ہوئے ایران کی جانب سے سچ بولنے والے صحافیوں کو خاموش کرانے کیلئے ان کے خاندان کے افراد کو سزا دینے کا ایک ظالمانہ سلسلہ قرار دیا ہے۔
وائس آف امریکہ کے  ڈائریکٹر ایلیز بیبراج نے کہا ہے کہ ان کے خبر رساں ادارے وائس آف امریکہ میں ملازمت کرنے والی  صحافی  کے بھائی کو قید کی سزا دینا ناقابل قبول ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم ایران کے اس جابرانہ اقدام کی مذمت کرتے ہیں، اس کا مقصد مسیح کے اہلِ خانہ کو ظالمانہ میں ہراساں کرنا ہے، انہوں نے کہا کہ عالمی صحافتی برادری ایران سے مطالبہ کرتی ہے  کہ وہ اس غیر منصفانہ فیصلے کو واپس لیں۔
فاروق رشید بٹ
عالمی امن اور اتحاد اسلامی کا پیام بر ، نام فاروق رشید بٹ اور تخلص درویش ہے، سابقہ بینکر ، کالم نویس ، شاعر اور ورڈپریس ویب ماسٹر ہوں ۔ آج کل ہوٹل مینجمنٹ کے پیشہ سے منسلک ہوں ۔۔۔۔۔

تازہ ترین خبریں

کورونا بحران کے باعث ٹی 20 ورلڈ کپ ملتوی کر دیا گیا

انرنیشنل کرکٹ کونسل کی طرف سے یہ حتمی بیان سامنے آ...

ایران میں حکومت کے مخالف صحافیوں کو سخت سزاؤں کا سلسلہ جاری ہے

مغربی اور امریکی میڈیا کے مطابق ایرانی سرکاری عدالت نے وائس...

Comments

Leave a Reply

تازہ ترین خبریں